The Aijaz Qureshi Show in association with Ms Erum Zehra, a Poetess and an Author will be paying Tribute to Pakistan’s Poets in a series of shows you can watch every Tuesday at 11pm Pakistan Time. Ep…

The Aijaz Qureshi Show in association with Ms Erum Zehra, a Poetess and an Author will be paying Tribute to Pakistan’s Poets in a series of shows you can watch every Tuesday at 11pm Pakistan Time.

Episode – 3 is dedicated to Ahmad Faraz

Guest: Erum Zehra

Erum is a Poetess and an Author, she have written 4 books based on Poetry, Novel , Afsana and Short Crimme Stories of Karachi. Done Masterss in Urdu Advanced, Received many Awards and Medals in Adabi Actvites, like Most daynamic women Award of 2018. She is ex editor of Monthly Komal Digest, ex inchage of Bazm-e Khawateen, ex editor of Adab o Fun, now days Erum is working with Urdu Litrery Association International as a Chairperson.

Please subscribe to our YouTube Channel and Press the Bell Icon:

https://youtube.com/c/thedaydreamersshow

#dreamstelevision #theaijazqureshishow #aijazqureshi #aq #erumzehra #ez #ahmadfaraz

75 thoughts on “The Aijaz Qureshi Show in association with Ms Erum Zehra, a Poetess and an Author will be paying Tribute to Pakistan’s Poets in a series of shows you can watch every Tuesday at 11pm Pakistan Time. Ep…

  1. Umar Hayat Reply

    محبت ایسی کہانی ہے
    ۔
    جدائی میں تمییں ہر پل
    ۔
    جس کی یاد آنی ہے
    ۔
    محبت وہ کہانی ہے
    ۔
    umar hayat

  2. Umar Hayat Reply

    محبت گر نبہانی ھے وفا کی لاج تم رکھ لو
    ۔
    کبھی جو میں نے مانگی ہے دعا کی لاج تم رکھ لو
    ۔
    #Umar_Hayat

  3. Ali Dogar Reply

    آج تو برف اور بارش کا امتزاج کچھ اس طرح ہوا ہے کہ لوگ خوف زدہ ہیں کہ ڈریس بارش کے لیے کیا جائے یا پر برف کے لئیے!!

  4. Umar Hayat Reply

    گلاب چاہئیے ، نہ چاہئیے ہمیں عطر
    ۔
    نکاح کرنے کو ہم ؛ کب سے ہیں منتظر
    ۔
    umar hayat 😁😅😂

  5. Ali Dogar Reply

    سنا ہے اس کے بدن کی تراش ایسی ہے – کہ پھول اپنی قبائیں کتر کے دیکھتے ہیں

  6. Ali Dogar Reply

    سنا ہے لوگ اسے آنکھ بھر کے دیکھتے ہیں
    سو اس کے شہر میں کچھ دن ٹھہر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے ربط ہے اس کو خراب حالوں سے
    سو اپنے آپ کو برباد کر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے درد کی گاہک ہے چشم ناز اس کی
    سو ہم بھی اس کی گلی سے گزر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے اس کو بھی ہے شعر و شاعری سے شغف
    سو ہم بھی معجزے اپنے ہنر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے بولے تو باتوں سے پھول جھڑتے ہیں
    یہ بات ہے تو چلو بات کر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے رات اسے چاند تکتا رہتا ہے
    ستارے بام فلک سے اتر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے دن کو اسے تتلیاں ستاتی ہیں
    سنا ہے رات کو جگنو ٹھہر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے حشر ہیں اس کی غزال سی آنکھیں
    سنا ہے اس کو ہرن دشت بھر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے رات سے بڑھ کر ہیں کاکلیں اس کی
    سنا ہے شام کو سائے گزر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے اس کی سیہ چشمگی قیامت ہے
    سو اس کو سرمہ فروش آہ بھر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے اس کے لبوں سے گلاب جلتے ہیں
    سو ہم بہار پہ الزام دھر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے آئنہ تمثال ہے جبیں اس کی
    جو سادہ دل ہیں اسے بن سنور کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے جب سے حمائل ہیں اس کی گردن میں
    مزاج اور ہی لعل و گہر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے چشم تصور سے دشت امکاں میں
    پلنگ زاویے اس کی کمر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے اس کے بدن کی تراش ایسی ہے
    کہ پھول اپنی قبائیں کتر کے دیکھتے ہیں
    وہ سرو قد ہے مگر بے گل مراد نہیں
    کہ اس شجر پہ شگوفے ثمر کے دیکھتے ہیں
    بس اک نگاہ سے لٹتا ہے قافلہ دل کا
    سو رہروان تمنا بھی ڈر کے دیکھتے ہیں
    سنا ہے اس کے شبستاں سے متصل ہے بہشت
    مکیں ادھر کے بھی جلوے ادھر کے دیکھتے ہیں
    رکے تو گردشیں اس کا طواف کرتی ہیں
    چلے تو اس کو زمانے ٹھہر کے دیکھتے ہیں
    کسے نصیب کہ بے پیرہن اسے دیکھے
    کبھی کبھی در و دیوار گھر کے دیکھتے ہیں
    کہانیاں ہی سہی سب مبالغے ہی سہی
    اگر وہ خواب ہے تعبیر کر کے دیکھتے ہیں
    اب اس کے شہر میں ٹھہریں کہ کوچ کر جائیں
    فرازؔ آؤ ستارے سفر کے دیکھتے ہیں

  7. Ali Dogar Reply

    جی اچھا ہے۔ میں زرا دیر آیا ہوں۔ مگر یہ میں نہ اپنے یونیورسٹی کے زمانہ میں زبانی یاد کی تھی اور آج تک مجھے از بھر ہے

  8. Muhammad Ayub Sabir Reply

    احمد فراز نے اپنی زبان سے تردید کی ھے۔۔ان بارشوں سے دوستی اچھی نہیں فراز ۔۔یہ شعر بقول فراز ان کا نہیں ھے

  9. Umar Hayat Reply

    میرے صبر کی انتہا کیا پوچھتے ہو فراز
    وہ مجھ سے لپٹ کہ رویا کسی اور کے لیے

  10. Rana Umair Reply

    تو خدا ہے نہ مرا عشق فرشتوں جیسا

    دونوں انساں ہیں تو کیوں اتنے حجابوں میں ملیں

  11. Sajjad Hussain Reply

    سوری من تھوڑا لیٹ ھو گیا ھون آج دیبی من بھیت بارش ھویی ھے ابو زیبی سے ایآھون اھبی

  12. Ali Dogar Reply

    کامیڈی کی کوشش کر رہا ہوں
    ——————————
    پیارا نہ کرنا ہی گر میرا مقدر ٹھہرا ہے
    مجھ کچھ دے دلا کر سمجھا کیوں نہی دیتے

  13. Umar Hayat Reply

    محبت گر نبہانی ھے وفا کی لاج تم رکھ لو
    ۔
    کبھی جو میں نے مانگی ہے دعا کی لاج تم رکھ لو
    ۔
    #Umar_Hayat]

  14. Ali Dogar Reply

    کامیڈی کی کوشش کر رہا ہوں
    ——————————
    پیار نہ کرنا ہی گر میرا مقدر ٹھہرا ہے
    مجھ کچھ دے دلا کر سمجھا کیوں نہی دیتے

  15. Tafseer Uddin Reply

    موسم کی مناسبت سے دوبارہ ارشاد کیا ھے۔

    کوئی برفانی سے برفانی ھے
    ھم تو اس سردی کی ہاتھوں مر چلے۔ اف اللہ

  16. Neha Zahid Reply

    but Erum Zehra ka andaz e bayan or Ahmed Faraz ki shayeri ka jawab nahi , Erum mojoda door ki wo shayera hain jis ko sunny k liy hum hamesha Muntazir rehty hain , is door main mayeri kalam itni c umar main pesh karna Erum ka khasa hai or phir Erum Ka Sahara shakhsiyat py baat karna Qabil e deed bhi hai kabil e fakhar bhi , u both deserve Congrats

  17. Kiran Waqar Reply

    kis ki tarif kr rhy aap log 😡Afroz Rizvi is fake Shayera .is khaton ko Most Senior Poet Ronaq Hayat Shayeri likh k dety rahy hain or ab wo mutalba kr rhy hain k Afroz un ki gzlain wapis karain . . . Ye to google krin to bhi pta chl jaiy .Afroz Rizvi Ronaq Hayat ki ghzln wapis krin

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.